جہلم میں سوئی گیس پریشر کی کمی، کمپریسر مافیا کی موجیں، حکام خاموش تماشائی

0

جہلم: شہر اور مضافات میں سوئی گیس پریشر کی کمی، ’’کمپریسر مافیا‘‘ کی موجیں، بااثر افراد نے گھروں، پلازوں، کارروباری مراکز میں کمپریسر سے زندگی پرسکون بنا لی جبکہ عام آدمی کے چولہے ایک وقت کی روٹی بنانے سے بھی محروم ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہاں پر بجلی ،پٹرولیم سمیت دیگر بحرانوں نے عوام کو اپنے چنگل میں بری طرح جکڑ رکھا ہے وہاں پر رہی سہی کسر شہر سمیت ملحقہ آبادیوں بالخصوص مشین محلہ ، بلال ٹاؤن، جادہ، ڈھوک فردوس، اسلام پورہ ، محمود آباد، کریم پورہ، مجاہد آباد، شمالی محلہ سمیت دیگر ملحقہ علاقوں میں محکمہ سوئی گیس کی مبینہ ملی بھگت سے تقریباً ہر گلی محلے میں بااثر افراد نے مبینہ طور پر سوئی گیس کے پریشر کو پورا کرنے کے لئے گھروں، پلازوں، کارروباری مراکز میں کمپریسر اور چائنہ گیس باکس وغیرہ لگا کر سوئی گیس کو انجوائے کر رہے ہیں۔

عام صارفین کے گھروں میں 24 گھنٹے کے دوران ایک وقت کی روٹی بنانے کیلئے بھی چولہوں میں گیس کی منہ دکھائی تک نصیب نہیں ہوتی اور متعلقہ محکمہ کے ذمہ داران کی پشت پناہی کے حامل اور بااثر افراد سرعام گھروں، ہوٹلوں، میرج ہالز میں کمپریسر استعمال کرکے عام آدمی کی حق تلفی میں مصروف عمل ہیں جن کوکوئی پوچھنے والا نہیں۔

محکمہ سوئی گیس کے حکام بھی صورتحال کا نوٹس لینے کی بجائے صرف خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں، صارفین نے بتایا کہ سوئی گیس کا عملہ مبینہ طور پر چمک اور سفارشی بنیادوں پر کمپریسر مافیا کے سامنے بے بس دکھائی دیتا ہے۔

عوامی سماجی، رفاعی، فلاحی حلقوں سمیت شہریوں نے وفاقی وزیر پٹرولیم سمیت سوئی نادرن گیس پائپ لائن کے ارباب اختیار سے صورتحال کا نوٹس لیکر کمپریسر مافیا کے خلاف کارروائیاں کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی رائے دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.